صفحۂ اول    ہمارے بارے میں    رپورٹر اکاونٹ    ہمارا رابطہ
پیر 22 جولائی 2024 

لنڈی کوتل: ٹرانسپورٹرز اور انتظامیہ کے درمیان ٹیکس وصولی پر مذاکرات ایک بار پھر ناکام

نمائندہ اکثریت | اتوار 17 مارچ 2019 

قبائلی ضلع خیبر کے علاقہ لنڈی کوتل میں انتظامیہ کے ساتھ  ٹول ٹیکس پر مذاکرات کی ناکامی کے بعد ٹرانسپورٹرز نے ایک بار پھر پاک افغان شاہراہ کو احتجاجاً ٹریفک کےلئے بند کردیا جس کے باعث افغانستان کو مختلف اشیاء کی سپلائی معطل ہوگئی اور سڑک پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ انتظامیہ کی جانب سے پاک افغان شاہراہ پر قائم ٹول پلازہ پر ٹیکس کی وصولی کو ختم کرنے کی یقین دہائی کرائی تھی لیکن ٹول پلازہ پر ٹرکوں سے ٹیکس کی وصولی اب بھی جاری ہے، انہوں نے کہا کہ انضمام کے بعد حکومت نے قبائلی اضلاع کو 5 سال تک کےلئے ٹیکس سے مستثنیٰ قرار دیا تھا تاہم اس کے باوجود انتظامیہ کی جانب سے ٹیکس وصول کیا جارہا ہے جو کہ ظلم ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم اس شاہراہ پر کبھی بھی ٹیکس دینے کےلئے تیار نہیں ہے، حکومت وعدے کے مطابق ٹیکس وصولی کا فیصلہ واپس لے۔

مظاہرین نے کہا کہ حکومت قبائلی عوام کو روزگار دینے کے بجائے اُن سے روزگار چھین رہی ہے، ٹرکوں سے ٹیکس وصولی کے باعث پاک افغان تجارت بری طرح متاثر ہوگا، انہوں دھمکی دی کہ جب تک ٹیکس وصولی کا سلسلہ ختم نہیں کیا جاتا اُن کا یہ احتجاج جاری رہے گا۔

دوسری جانب نیشنل ہائی ویز اتھارٹی (این ایچ اے) حکام کا کہنا ہے کہ شاہراہ کی مرمت کےلئے ٹیکس وصولی کی جارہی ہے اور یہ وصولی اعلیٰ حکام کے احکامات پر کی جارہی ہے۔

ہمارے بارے میں جاننے کے لئے نیچے دئیے گئے لنکس پر کلک کیجئے۔

ہمارے بارے میں   |   ضابطہ اخلاق   |   اشتہارات   |   ہم سے رابطہ کیجئے
 
© 2020 All Rights of Publications are Reserved by Aksriyat.
Developed by: myk Production
تمام مواد کے جملہ حقوق محفوظ ہیں © 2020 اکثریت۔